ہم سے رابطہ کیجیئے   پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   انگليسي   العربيه   فارسي  

مثالی خواتین


بعض روایات میں چار خواتین کی سیادت کی بات ہوئی ہے۔ رسول اللہ (ص) نے فرمایا: "افضل نساء العالمین خدیجة، و فاطمة و مریم و آسیة امرأة فرعون»۔(7) افضل ترین خواتین چار ہیں خدیجہ (ص)، فاطمہ (س)، مریم (س) اور فرعون کی اہلیہ آسیہ۔
وہ عورت جنہوں نے چالیس سالوں تک قرآنی آیات سے بات کی
فرزند رسول حضرت امام حسین علیہ السلام کی شریکہ حیات ایران کے ساسانی بادشاہ یزد گرد کی بیٹی شہربانو تھیں ۔
حضرت امام محمد باقر علیہ السلام کی زوجہ اور فرزند رسول امام جعفر صادق علیہ السلام کی مادر گرامی ہیں آپ نے ان دو امام ہمام سے بہت زيادہ علوم اور فضائل و کمالات حاصل کئے ۔
حضرت فاطمہ بنت اسد حضرت علی علیہ السلام کی والدہ گرامی تھیں۔ اور اسد، قبیلہ بنت عامر کے بطن سے حضرت ہاشم کے فرزند تھے۔ اس لحاظ سے آپ (فاطمہ بنت اسد) حضرت ہاشم کی پوتی تھیں۔
امام صادق علیہ السلام نے ام داود کو اس طرح سے یہ عمل بتایا.../ عمل ام داؤد کہ یھی اس دن کا خاص عمل ہے جو حاجت بر آوری ، مصیبت کی دوری اور ظالموں کے ظلم سے بچاو کیلئے بھت مؤثر ہے ...
فرزند رسول حضرت امام جعفرصادق علیہ السلام کی شریک حیات اور حضرت امام موسی کاظم علیہ السلام کی والدہ ماجدہ حمیدہ بنت صاعد تاریخ اسلام کی ایک عظیم المرتبت ، نامور اور بافضیلت خاتون ہیں۔
نجمہ خاتون/ مدینہ میں امام رضا علیہ السلام کی والدہ ماجدہ کا گھر / حضرت امام علی رضا علیہ السلام کی مادر گرامی جناب نجمہ خاتون کی قبر مطہر مدینہ منورہ میں مرجع خلائق ہے/
حضرت خديجہ کا شمار تاريخ انسانيت کي ان عظيم خواتين ميں ھوتاھے جنھوں نے انسانيت کي بقاء اور انسانوں کي فلاح و بھبود کے لئے اپني زندگي قربان کر دي ـ
امام زين العابدين عليہ السلام فرماتے هيں کہ بحمد اللہ ميري پھوپھي (زينب سلام عليھا) عالمہ غيرمعلمہ هيں اور ايسي دانا کہ آپ کو کسي نے پڑھايا نهيں هے.
ابو البشر حضرت آدم علیہ السلام کی زوجہ محترمہ،ام البشر جناب حوا ، آدم علیہ السلام کی(تخلیق سے) بچی ہوئی مٹی سے پیدا ہوئیں۔جیسا کہ ارشاد رب العزت ہے: وَخَلَقَ مِنْھَا زَوْجُھَا۔ "اور اس کا ...
حضرت نوح علیہ السلام پہلے نبی ہیں جو شریعت لے کر آئے جیسا کہ ارشاد رب العزت ہے: شَرَعَ لَکُمْ مِّنْ الدِّیْنِ مَا وَصّٰی بِہ نُوْحًا وَّالَّذِیْ أَوْحَیْنَا إِلَیْکَ۔ "اللہ نے تمہارے دین کا دستور معین کیا جس کا ...
حضرت لوط ،حضرت ابراہیم کے بھتیجے تھے ان کی قوم سب کے سامنے کھلم کھلا برائی میں مشغول رہتی۔ لواطت ان کا محبوب مشغلہ تھا۔ پتھروں کی بارش سے انہیں تباہ کر دیا گیا۔
زوجہ حضرت ابراہیم/ابراہیم و نمرود کا مباحثہ/حضرت ابراہیم و اسماعیل اور تعمیر کعبہ/ امتحان میں کامیابی کے بعد امامت کا ملنا/
اور یوسف جس عورت کے گھر میں تھے۔اس نے انہیں اپنے ارادہ سے منحرف کر کے اپنی طرف مائل کرنا چاہا اور ...
حضرت ایوب کی حیران کن زندگی صبر و استقامت کی اعلیٰ مثال تھی ان کی زوجہ محترمہ کا بے مثال ایثار مشکلات میں گھرے ہوئے انسانوں کیلئے مشعل راہ ہے...
اور فرعون کی زوجہ نے کہا یہ بچہ تو میری اور تیری آنکھوں کی ٹھنڈک ہے اسے قتل نہ کرو ممکن ہے کہ یہ ہمارے لیے مفید ثابت ہو ہم اسے بیٹا بنا لیں اور وہ (انجام سے )بے خبر تھے...
حضرت شعیب کی خدمت میں موسیٰ کی آمد۔ شعیب کی طرف سے شادی کی پیش کش۔حق مہر کا تعین۔کئی سال کا کام۔پھر واپس روانگی۔ راستہ میں بچے کی ولادت اور نبوت کا ملنا ان واقعات میں موسیٰ کی ماں کا مامتا پر ضبط، خواہر موسی کی جفا کشی اور...
جب فرشتوں نے کہا اے مریم۔ اللہ تجھے اپنی طرف سے ایک کلمے کی بشارت دیتا ہے جس کا نام مسیح عیسیٰ ابن مریم ہو گا وہ دنیا و آخرت میں آبرو مند ہو گا اور مقرب لوگوں میں سے ہو گا اور...
(اے رسول یاد کریں وہ وقت) جب آپ اس شخص سے جس پر اللہ نے اور آپ نے احسان کیا تھا کہہ رہے تھے۔ اپنی زوجہ کو نہ چھوڑو اور اللہ سے ڈرو۔ اور وہ بات آپ اپنے دل میں چھپائے ہوئے تھے...
رسول اعظم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم ) کی اکلوتی بیٹی ، پر عظمت بیٹی ، معصومہ بیٹی جس کی رضا خدا کی رضا، جس کی ناراضگی خدا کی ناراضگی، باپ کا میوہ ٴدل، جس کے متعلق حضور کا ...
حضرت مریم ایک شجاع وبہادر خاتون تھیں اور تاریخ میں عظیم تبدیلیوں کے آغاز کی ذمہ داری ان کے سپرد کی گئی تھی حضرت عیسی مسیح علیہ السلام کا وجود اس عظیم روحانی خاتون کا ایک روشن کمال شمار ہوتا ہے
جناب آسیہ کا ایمان کس درجے کا ایمان تھا کہ نہ تو فرعون کے دربار کا رزق اور جلال اور نہ ہی فرعون جیسے ظالم کے فشار اور شکنجہ ان کے گھٹنوں کو جھکا سکے
بلقیس یا ملکہ سبا اس عورت کی داستان ہے جس نے قوم سبا پر حکومت کی جو ایک نہایت ہی عقلمند اور دور اندیش خاتون تھیں ملکہ سبا کے حالات زندگی سے مزید آشنائی کے لئے ہمارے ساتھ رہیں
تاریخ اسلام کی مثالی اور عظیم خواتین میں سے ایک جلیل القدر خاتون حضرت علی علیہ السلام کی بیٹی زینب صغری سلام اللہ علیہا ہیں جنہیں ام کلثوم کے لقب سے یاد کیا جاتا ہے آپ حضرت امام علی علیہ السلام اور شہزادی...
تاریخ اسلام کی عظیم المرتبت خواتین میں سے ایک جلیل القدر خاتون حضرت ام البنین سلام اللہ علیہا ہیں جو ہیشہ حضرت امام حسین علیہ السلام کے قاتلوں اور بنی امیہ کے حکمرانوں کی مذمت کیا کرتی تھیں آپ ہمیشہ ...
روایت میں ہے کہ جب عبداللہ میدان کارزار میں گئے تو ام وہب نے ایک لکڑی اٹھائی اور ان کے پیچھے پیچھے میدان جنگ کی طرف گئیں تاکہ اپنے شوہر کی مدد اور دشمنوں سے جنگ کریں جب ...
کربلا کی عظیم وشجاع خواتین میں ایک " ام خلف " بھی ہیں وہ پہلی صدی ہجری کی دلیر و شجاع عورتوں میں سے ہیں آپ کی شادی پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے خاص صحابی ...
جب امام حسین علیہ السلام کی شہادت کی خبر مدینہ پہنچی تو بنی ہاشم کی عورتوں نے نوحہ و شیون برپا کیا جناب ام لقمان کا سب سے اہم کارنامہ یہ تھا کہ آپ نے قافلہ حسینی کے استقبال کے لئے ایک گروہ تیار کیا...
اسلامی تاریخ کی ایک اور نامور خاتون حضرت امام رضا علیہ السلام کی شریکہ حیات خیزران ہیں ان کے بارے میں پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پیشن گوئی کی تھی ۔
فرزند رسول حضرت امام علی رضا علیہ السلام کی ولادت کو پچیس سال گذر چکے تھے کہ پہلی ذیقعدہ سن ایک سو ایکہتر ہجری قمری کو حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیہا مدینہ منورہ میں پیدا ہوئیں-
فرزند رسول حضرت امام محمد تقی علیہ السلام کی شریکہ حیات اور حضرت امام علی نقی علیہ السلام کی مادرگرامی جناب " سمانہ " عالمہ ، فاضلہ اور ایک متقی و عبادت گذار خاتون ...
تاریخ اسلام کی ایک اور عظیم و نامور خاتون فرزند رسول حضرت امام محمد تقی علیہ السلام اور جناب سمانہ کی صاحبزادی اور حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام کی پھوپھی " حکیمہ خاتون " ہیں۔
تاریخ اسلام کی ایک اور نامور خاتون حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام کی شریکہ حیات اور فرزند رسول حضرت امام مھدی آخرالزماں عجل اللہ تعالی فرجہ الشریف کی مادر گرامی جناب نرجس خاتون ہیں-
ام حسن عسکری کی والدہ کے مندرجہ ذیل نام ذکر ہوئے ہیں: سلیل، سوسن ،حدیث ، حدیثہ، حریبہ اور عسفان۔ علامہ مجلسی لکھتے ہیں :کہ امام حسن عسکری کی ماں کے نام :حدیث ، سوسن اور سلیل
امام محمد باقر کی والدہ کا صرف ایک نام ذکر ہوا ہے اور وہ فاطمہ ہے۔ ان کی کنیت یہ ہیں ام عبداللہ ،ام الحسن؛ ام عبدہ ؛ ام عبیدہ؛ القاب یہ ہیں :صدیقہ ؛ آمنہ ؛ تقیہ اور محسنہ
یہ واضح رہے کہ ہمارے اسلاف سے جو مطالب ہم تک پہنچتے ہیں وہ کبھی فقہ کے بارے میں ہے جن میں کسی کام کو انجام دینے یا انجام نہ دینے کے بارے میں کہا گیا ہے ، ان کے بارے میں ہمارے فقہاء عظام نے بہت تکلیفیں برداشت کی ہیں اور ...
بی بی سکینہ بنت حسین(ع) نے کوفہ میں ایک ایسا عظیم خطبہ ارشاد فرمایا کہ اہل کوفہ آپ (ع) کی بلاغت و فصاحت پر دنگ رہ گئے اس خطبہ نے لوگوں کے دلوں کو کاٹ ڈالا اور لوگ غم کے سمندر میں غوطہ ...
جناب ام سلمہ کی والدہ عاتکہ بنت عامر بن مالک تھیں- بعضوں نے عاتکہ کو پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی پھپھی بتایا ہے...
ام المومنین جناب سودہ ہمیشہ کوشش کرتی تھیں کہ اپنے کردار و رفتار سے آنحضرت {ص} کو خوشحال رکھیں، مسن ھونے کے باوجود آنحضرت {ص} کی خدمت میں شوخ مزاج تھیں-
معروف مترجم قرآن، شاعرہ اور مصنفہ؛صفار زادہ كی وحيانی اسلوب سے آشنائی؛ طاہرہ صفار زادہ کے انتقال پرملال پر قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای کا تعزیتی پیغام
"زیارت عتبات عالیات" کی کتاب کی مصنفہ؛ شیخ انصاری رحمتہ اللہ علیہ کی کتاب "تقلید" اور کتاب "دماء ثلاثہ عروہ الوثقی" اور زیارت عاشورا کی خاتون شارح
ایران کی امام صادق یونیورسٹی میں شعبہ طالبات کی تحقیقاتی یونٹ کی نائب سربراہ اور قرآنی موضوعات پر تحقیق و ریسرچ کرنے والی خواتین میں شامل...
خواتین اور خاندان کی کلچرل اور سوشل کونسل کی صدارت اور ثقافتی انقلاب کی سپریم کونسل کے اراکین میں شامل اور مختلف ذمہ داریاں
پروین کی بیشتر معروف نظمیں مثنویات، قصائد اور قطعات پر مشتمل ہیں۔ سادہ اسلوب کی بنا پر نہیں سبک خراسانی کا پیرو سمجھا جاتا ہے۔ اگرچ اہن کے انداز بیان میں سبک عراقی کی جھلکیاں بھی دکھائی دیتی ہیںَ بہرحال کلاسیکی قوالب کے استعمال میں انھوں نے استدانہ مہارت دکھائی ہے۔
وراثت اور خاندان کی تاثیر انسان کی رفتار و گفتار میں ناقابل تردید ہے۔ اسی وجہ سے وہ خاندان جن میں پیغمبروں اور آئمہ معصومین(ع) کا وجود رہا ہے عام طور پر
یہ عظیم عورت باعث بنی کہ اس کا شوہر امام حسین (ع) کے باوفا اصحاب میں شامل ہوکر شہادت کے عظیم درجے پر فائز ہوئے ۔
وہب بن عبداللہ اپنی ماں اور بیوی کے ساتھ امام حسین (ع) کے لشکر میں شامل تھا ۔ اس کی ماں اسے شھادت کی ترغیب دلاتی تھی کہ میرے بیٹے اٹھو، اور فرزند رسول (ع) کی مدد کرو ۔
وہ شیر دل خاتون کہنے لگیں:حبیب! آپ فرزند رسول (ص) کی مدد کیلئے جائیں میری ،گھر اور جائیداد کی فکر نہ کریں ۔خدا کا خوف کریں ۔جب حبیب نے اپنی بیوی کا خلوص دیکھا تو فرمایا: میں تیرا ارمان نکالوں گا ۔
جناب ام البنین (س)کا بڑا احسان ہے قیام حق پر ۔ چار بیٹے عباس،عبداللہ ، جعفر اورعثمان تھے ۔ ایک پوتا تھا ،پانچ قربانیاں ایک گھر سے
کربلا میں ۹ شہید ایسے ہیں کہ جن کی مائیں خیمہ گاہ میں ان پر بین کر رہی تھیں:
عظیم خاتون شہیدہ آمنہ بنت الہدیٰ نے صدامی دہشت گردوں کے خلاف بلا خوف و خطر عراقی غریب عوام کے بہبود اور تعلیم کی پسماندگی کی دوری اور شعور اسلامی کی بیداری کے لئے فعال ترین کردار ادا کیا
رسول خدا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور آئمہ علیھم السلام کے اصحاب میں علم دوست اور بامعرفت خواتین بھی تھیں۔کہ جنہوں نے روایات کو بیان کر کے اپنی قابلیت کو دکھایا ۔ علم رجال کے ایک حصہ میں ان عورتوں کو متعارف کرایا گیا ہے
قريش كے ہاتھوں آل ياسر كو سخت ترين سزائيں دى گئيں نتيجتاً حضرت عمار كى ماں حضرت سميّہ (رحمۃ اللہ عليہ) ، فرعون قريش ابوجہل (لعنۃ اللہ عليہ) كے ہاتھوں شہيد ہوگئيں ...
دین اسلام کے عالمات میں سے ایک مشہور خاتون جنہوں نے اجتہاد کے درجہ تک پھنچی ہے بانو مجتہدہ امین اصفہانی تھیں جن کو بزرگ علماء سے اجتھاد کی اجازت حاصل تھی۔ اسلامی دنیا کی یہ عظیم مجتھده ، بانو نصرت امین اصفھانی " بانوئے ایرانی " (ایرانی خاتون) کے نام سے بھی مشہور ہیں-
خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت ؛ میدان جنگ میں لڑائی شروع ہونے سے ذرا پہلے سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا نے اپنے چاروں بیٹوں کو بلایا اور ان کو جہادوقتال کے لیے تیار کرنا شروع کیا۔انہوں نے اللہ کی راہ میں شہادت کا مقام و مرتبہ بیان کیا
تاریخ اسلام میں کبهی ایسے افراد بهی ملتے ہیں کہ جن کے نام رقم نہیں ہوئے ہیں لیکن عظمت و بزرگی کے لحاظ سے کم نظیر ہیں۔ انهیں میں سے وه عورت بهی ہے جس کا تعلق قبیلہ بنی نجار سے ہے۔ اس عورت کے بارے میں لکها ہے کہ جنگ احد میں اس نے اپنے والد، شوہر اور بیٹے کی قربانیاں دی تهیں۔
کربلا میں ۹شہید ایسے ہیں کہ جن کی مائیں خیمہ گاہ میں ان پر بین کر رہی تھیں:
ام لقمان ایک دلیر و شجاع عورت تهی، انہوں نے مدینہ کی حکومت کی پروا نہ کی اور کچه دوسری عورتوں کے ساته امام حسین (ع) کی مظلومیت و انقلاب کے بارے میں اشعار پڑه کر گریہ کیا اور مدینہ والوں کو بیدار کیا اور انہیں بنی امیہ کی مظالم و جابر حکومت کے خلاف برانگیختہ کیا۔