ہم سے رابطہ کیجیئے   پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   انگليسي   العربيه   فارسي  

اسلام کے ابتدائی دور میں عظیم خواتین


وہ عورت جنہوں نے چالیس سالوں تک قرآنی آیات سے بات کی
امام صادق علیہ السلام نے ام داود کو اس طرح سے یہ عمل بتایا.../ عمل ام داؤد کہ یھی اس دن کا خاص عمل ہے جو حاجت بر آوری ، مصیبت کی دوری اور ظالموں کے ظلم سے بچاو کیلئے بھت مؤثر ہے ...
جناب ام سلمہ کی والدہ عاتکہ بنت عامر بن مالک تھیں- بعضوں نے عاتکہ کو پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی پھپھی بتایا ہے...
ام المومنین جناب سودہ ہمیشہ کوشش کرتی تھیں کہ اپنے کردار و رفتار سے آنحضرت {ص} کو خوشحال رکھیں، مسن ھونے کے باوجود آنحضرت {ص} کی خدمت میں شوخ مزاج تھیں-
رسول خدا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور آئمہ علیھم السلام کے اصحاب میں علم دوست اور بامعرفت خواتین بھی تھیں۔کہ جنہوں نے روایات کو بیان کر کے اپنی قابلیت کو دکھایا ۔ علم رجال کے ایک حصہ میں ان عورتوں کو متعارف کرایا گیا ہے
قريش كے ہاتھوں آل ياسر كو سخت ترين سزائيں دى گئيں نتيجتاً حضرت عمار كى ماں حضرت سميّہ (رحمۃ اللہ عليہ) ، فرعون قريش ابوجہل (لعنۃ اللہ عليہ) كے ہاتھوں شہيد ہوگئيں ...
خنساء رضی اللہ عنہا کی ایمان افروز نصیحت ؛ میدان جنگ میں لڑائی شروع ہونے سے ذرا پہلے سیدہ خنساء رضی اللہ عنہا نے اپنے چاروں بیٹوں کو بلایا اور ان کو جہادوقتال کے لیے تیار کرنا شروع کیا۔انہوں نے اللہ کی راہ میں شہادت کا مقام و مرتبہ بیان کیا
تاریخ اسلام میں کبهی ایسے افراد بهی ملتے ہیں کہ جن کے نام رقم نہیں ہوئے ہیں لیکن عظمت و بزرگی کے لحاظ سے کم نظیر ہیں۔ انهیں میں سے وه عورت بهی ہے جس کا تعلق قبیلہ بنی نجار سے ہے۔ اس عورت کے بارے میں لکها ہے کہ جنگ احد میں اس نے اپنے والد، شوہر اور بیٹے کی قربانیاں دی تهیں۔
کربلا میں ۹شہید ایسے ہیں کہ جن کی مائیں خیمہ گاہ میں ان پر بین کر رہی تھیں:
ام لقمان ایک دلیر و شجاع عورت تهی، انہوں نے مدینہ کی حکومت کی پروا نہ کی اور کچه دوسری عورتوں کے ساته امام حسین (ع) کی مظلومیت و انقلاب کے بارے میں اشعار پڑه کر گریہ کیا اور مدینہ والوں کو بیدار کیا اور انہیں بنی امیہ کی مظالم و جابر حکومت کے خلاف برانگیختہ کیا۔