ہم سے رابطہ کیجیئے   پہلا صفحہ   سائیٹ کا نقشہ   انگليسي   العربيه   فارسي  


نورالدين جعفر بَدَخشى

نورالدين جعفر بدخشى (740-797) ہجری قمری کے نامور عارف اور صوفی تھے- میر سید علی ہمدانی کے خاص مرید اور اٹینڈنٹ تھے اور انہوں نے ان کی تعالیم سے بہت فیض حاصل کرلیا- میر سید علی ہمدانی بھی جب سفر کو جاتے تھے مریدوں کی تربیت اور ہدایت کو ان کے سپرد کردیتے تھے- مندرجہ ذیل کتابیں ان کی ہیں: خلاصہ المناقب؛ اصطلاحات صوفيہ؛ شرح اوراد فتحیہ احباب؛

سليم نيشابورى

میرزا سليم نيشابورى، دسویں صدی ہجری قمری کے کیلیگرافر، مصور اور تذہیب کے ماہر تھے- خطاطی کے رقعات، کتابت جلی اور رنگین خطاطی میں سلطان محمد نور کے انداز اور اسلوب کی پیروی کرتے تھے، مگر کتابت خفی میں اپنے استاد شاہ محمود نیشابوری کے نقش قدم پر چلتے تھے- انہوں نے خمسہ نظامی اور چہل حدیث کے ہر ایک کے ایک نسخے کی خطاطی کی ہے-

كمال خُجَندى

کمال الدین مسعود، "شیخ کمال" سے مشہور، آٹھویں اور ساتویں صدی ہجری قمری کے نامور عارف اور شاعر تھے جن کا اصل تعلق خجند سے تھا- ان کے اشعار میں خوشی اور شادمانی موجزن ہے جہاں تک کہ ان کے غمناک اشعار بھی رجائیت اور خوشی کی طرف مائل ہیں- انہوں نے عاشقانہ مضامین رکھنے والے اشعار کے ضمن میں آزادی کے فقدان اور ملک کی بگڑتی ہوئی صورت حال کا گلہ کیاہے- تیمور کا بیٹا "میرانشاہ"، ان کا مرید تھا- "دیوان کمال خجندی" ان کی تصنیف ہے-